46

چینی اور امریکی صدر کے مابین 7 ماہ میں پہلی بار ٹیلی فونک رابطہ.

چینی اور امریکی صدر کے مابین 7 ماہ میں پہلی بار ٹیلی فونک رابطہ.

(ڈیلی طالِب)
چینی اور امریکی صدر کے مابین 7 ماہ میں پہلی بار ٹیلی فونک رابطہ
دونوں رہنماؤں نے دوطرفہ تعلقات ، باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا

بیجنگ : چین کے صدرشی جن پنگ اور امریکی صدرجوبائیڈن کےدرمیان گذشتہ سات ماہ میں پہلی مرتبہ ٹیلی فونک رابطہ ہوا، دونوں رہنماؤں نے دوطرفہ تعلقات ، باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔ دونوں رہنماؤں کےدرمیان گفتگو میں رابطے برقرار رکھنے، ورکنگ ٹیموں کی سطح پر رابطے بڑھانے پر اتفاق ہوا ہے

چینی صدر شی جن پنگ نے کہا کہ موسمیاتی تبدیلی کے معاملے پر تعاون جاری رکھیں گے، چین سے متعلق امریکی پالیسی نے سنگین مشکلات پیدا کی ہیں۔ دونوں صدور نے تنازع کی طرف جانے والے راستے سے دور رہنے پر زور دیا۔ اس حوالے سے وائٹ ہاوس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ چین اور امریکی صدورکےدرمیان اسٹریٹجک معاملات پرطویل گفتگو ہوئی۔

جوبائیڈن کی چینی صدر سےگفتگو امریکہ اور چین کے درمیان جاری مسابقت کا نظام بہتر کرنےکی کوششوں کا حصہ ہے۔

دوسری جانب ایک امریکی عہدیدار نے بتایا کہ امریکی و چینی صدورکےدرمیان گفتگو تقریباً 90 منٹ تک جاری رہی، دونوں رہنماؤں نے کورونا وبا سمیت متعدد عالمی امور پر گفتگو کی۔ دونوں رہنماؤں کےدرمیان ٹیلی فونک رابطے کا مقصد مخصوص معاہدے یا نتائج پیدا کرنا نہیں تھا۔ وائٹ ہاؤس کے مطابق چینی صدر شی جن پنگ نے سنگین مشکلات سے دوچار تعلقات کو نئی سمت دینے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔
یاد رہے کہ گذشتہ روز افغانستان میں نئی حکومت کے اعلان کے بعد امریکی صدر جوبائیڈن نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ طالبان کے کنٹرول کے بعد چین ان کے ساتھ معاملات طے کرنے کی کوشش کرے گا۔ جوبائیڈن سے سوال کیا گیا کہ کیا وہ اس حوالے سے فکر مند ہیں کہ چین اس گروپ کو فنڈز دے گا، جس پر امریکہ نے پابندیاں عائد کر رکھی ہیں؟ جس پر امریکی صدر نے جواب میں کہا کہ چین کے طالبان کے ساتھ حقیقی مسائل ہیں، لہٰذا وہ ان کے ساتھ معاملات طے کرنے کی کوشش کریں گے۔ جیسا کہ پاکستان، روس اور ایران کرتے ہیں۔ وہ سب یہ جاننے کی کوشش کر رہے ہیں کہ اب انہیں کیا کرنا چاہئیے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں