37

’ورلڈکپ کا نام بدلہ پور رکھ دو‘

’ورلڈکپ کا نام بدلہ پور رکھ دو‘

(ڈیلی طالِب)

ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کی فیورٹ ٹیم انگلیڈ کو سیمی فائنل میں نیوزی لینڈ نے شکست دے کر پہلی بار ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے فائنل میں رسائی حاصل کر لی۔

نیوزی لینڈ اتوار سات نومبر کو ہونے والے فائنل مقابلے میں پاکستان اور آسٹریلیا کے مابین ہونے والے سیمی فائنل کی فاتح ٹیم کے ساتھ مدمقابل ہو گی۔
نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیمسن نے ٹاس جیت کر انگلینڈ کو پہلے بلے بازی کی دعوت دی جو فیصلہ درست ثابت ہوا۔

پہلے بلے بازی کرتے ہوئے انگلیڈ ٹیم نے معین علی کی برق رفتار ففٹی کی بدولت مقررہ 20 اوورز میں چار وکٹوں کے نقصان پر 166 رنز بنائے۔
نیوزی لینڈ کے وکٹ کیپر کی جانب سے ڈیوڈ ملان کا کیچ چھوڑنا مہنگا ثابت ہوا اور ملان نے انگلینڈ کے ٹوٹل میں 41 رنز جوڑ دیے۔

انگلینڈ کے ٹارگٹ کے تعقب میں کیویز کپتان اور اوپنر بلے باز دونوں ہی جلد آوٹ ہو کر پویلین لوٹ گئے۔

ڈیریل میچل اور ڈیون کنوے کی شراکت داری نے نیوزی لینڈ کی پوزیشن مستحکم کر دی۔ میچل نے 73 رنز جب کہ کنوے نے 46 رنز کی باری کھیلی۔

جیمز نیشم جب کھیلنے آئے تو انہوں نے وہی کردار ادا کیا جو پاکستان کے لیے آصف علی اور جنوبی آفریقہ کے لیے ڈیوڈ ملر نے ادا کیا۔

انہوں نے صرف 11 گیندوں پر 3 چھکوں اور ایک چوکے کی مدد سے 27 رنز بنائے۔

نیوزی لینڈ نے ایک اوور قبل ہی 5 وکٹوں کے نقصان پر پورا کر کے فائنل میں جگہ حاصل کر لی۔2019 ورلڈکپ کے بعد ایک بار پھر دونوں ٹیموں کے درمیان سنسنی خیز مقابلہ ہوا جس پر ٹوئٹر پر مختلف تبصرے ہوتے رہے۔
ایک صارف نے تو میچ پر لکھا کہ پاکستان اور بھارت تو ویسے ہی بدنام ہیں اصل مزہ تو انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کا آتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں